Thursday, April 24, 2014

نگر دروش میں جوانسال خاتون کی ہلاکت/پولیس مصروف تفتیش

دروش(جہانزیب) دروش سے 18کلومیٹر دور نگر کے نواحی گاؤں میں گذشتہ روز ایک جوانسال خاتون مسمۃ بی بی نعیمہ زوجہ جمشید عالم اپنے کمرے میں مردہ حالت میں پائی گئی۔ تفصیلات کے مطابق نگر کے قریب گاؤں کے رہائشی جمشید عالم کی اہلیہ بدھ کے روز اپنے کمرے میں مردہ حالت میں پائی گئی جس کے بارے میں ابتدائی طور پر بتایا گیا کہ انہوں نے خود کشی کر لی ہے۔ انکے جسم پر چھریدار بندوق کے گولی کے نشان موجود تھے۔ تاہم بعد ازاں مذکورہ خاتون کے بھائی فخرالدین نے دروش پولیس کے سامنے اپنے بہنوئی جمشید عالم پر دعویداری کی ہے جسکے بعد دروش پولیس نے ملزم جمشید عالم کے خلاف دفعہ 302/13A-Oکے تحت مقدمہ درج کرکے تفتیش شروع کر دی ہے۔ 
مقتولہ دروش کے علاقے بیوڑی کی رہائشی تھی اور انہیں بیوڑی میں آبائی قبرستان میں سپرد خاک کیا گیا۔ 

ڈسٹرکٹ ڈویلپمنٹ فورم کا اجلاس/جلد فورم کو حتمی شکل دی جائیگی

چترال (نامہ نگار)صوبائی حکومت کی ہدایت پر قائم کئے جانے والے ڈسٹرکٹ ڈویلپمنٹ فورم کا اجلاس چترال میں منعقد ہوا جسمیں چترال میں کام کرنیوالے مختلف سرکاری و غیر سرکاری اداروں کے سربراہان نے شر کت کیں۔ ڈسٹرکٹ ڈویلپمنٹ فورم (DDF) کے اس اجلاس کی صدار ت اسسٹنٹ کمشنر ریونیو سید مظہر علی شاہ نے کی۔ اجلاس میں فورم کے خدو خال اور اسکے کام کرنے کے طریقہ کار پر مشاورت کی گئی۔ مختلف اداروں کے سربراہان نے اس سلسلے میں اپنی سفارشات پیش کیں۔ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے اسسٹنٹ کمشنر سید مظہر علی شاہ نے کہا کہ صوبائی حکومت کی ہدایت پر ڈپٹی کمشنر صاحب کی سربراہی میں اس فورم کا قیام عمل میں لا یا جا رہا ہے جو کہ ضلع کے اندر کام کرنیوالے مختلف سرکاری و غیر سرکاری اداروں کے درمیان مضبوط رابطہ کاری اور ترقیاتی عمل میں باہمی تعاون اور اشتراک کو ممکن بنائے گی۔ انہوں نے اداروں پر زور دیا کہ وہ اس فورم کے ساتھ ہر قسم تعاون کریں۔ انہوں نے اس فورم کو علاقے کے ترقی کے لئے نہایت اہم قرار دیا۔ واضح رہے کہ ڈی ڈی ایف کے تشکیل کے سلسلے میں پاکستان پاورٹی ایلیویشن فنڈ تعاون فراہم کررہی ہے۔ 
سردار حسین نے صوبائی اسمبلی کے رکن کی حیثیت سے حلف اٹھا لیا۔ تفصیلات کے مطابق 13اپریل کو صوبائی اسمبلی کے حلقہ پی کے 90کے سات پولنگ اسٹیشنوں پر دوبارہ انتخابات کے نتیجے میں کامیاب ٹھرنے والے پاکستان پیپلز پارٹی کے نو منتخب رکن صوبائی اسمبلی سید سردار حسین شا ہ نے بدھ کے روز صوبائی اسمبلی میں اپنی رکنیت کا حلف اٹھایا۔ صوبائی اسمبلی کے ڈپٹی اسپیکر نے نو منتخب رکن اسمبلی سے حلف لیا۔ اس موقع پر اراکین اسمبلی نے سید سردار حسین کو مبارکباد پیش کیں۔ سید سردار حسین کے حلف اٹھانے سے صوبائی اسمبلی میں پاکستان پیپلز پارٹی کے اراکین کی تعداد 4سے بڑھ کر 5ہوگئی ہے جبکہ حکمران اتحاد کو ایک نشست کی کمی کا نقصان اٹھا نا پڑا۔ 

Wednesday, April 23, 2014

چترال کی ایک اور بیٹی نے پی ایچ ڈی (پی ۔ایچ ڈی)کا سہرا سر پر سجا لیا ۔

پشاور(پ ر)ڈاکٹر سلمیٰ انجم سکنہ شا ڈوک چترال نے اسلامی /عربی ادب میں پی ایچ ڈی ، معروف ماہر اقبالیات اور اقبالیاتی ادب پر پاکستان کا پہلہ ایوارڈ یافتہ سکالر پروفیسر ڈاکٹر یعقوب خان مروت کی زیر نگرانی اپنا تحقیقی مقالہ معروف مصری ادیب ڈاکٹر نجیب گیلانی کے علمی کام اور ڈاکٹر علامہ محمد اقبال ؒ کے علمی کام کے اثرات پر مکمل کرلی ۔ 
آپ کے اعزاز میں دفاعی تقریب برائے پی ایچ ڈی گزشتہ دنوں پشاور یونیورسٹی میں منعقد ہوئی ، جس میں آپ کے سپر وائزر پروفیسر ڈاکٹر یعقوب خان مروت ،آپ کے ممتحن بین الاقوامی اسلامی یونیورسٹی اسلام آباد کے پروفیسر ڈاکٹر حبیب الرحمن عاصم جامعہ پشاور کے اساتذہ کرام ،شعبہ عربی ، اسلامیات کے اساتذہ کرام اور سکالر کے قریبی عزیزوں محمد زاہد الدین زاہد ؔ ، دیگر بھائیوں اور بہنوں نے شرکت کی ۔ یاد رہے کہ سکالر سلمیٰ انجم شاہ ڈوک چترال کے معروف اور جانے پہچانے شخصیت ذار دولہ خان (مرحوم ) کی صاحبزادی ہے ۔ 

گزشتہ سالوں کٹائی شدہ لکڑیوں کو پرمٹ ریٹ پر چترال کے ضرورت مند عوام میں تقسیم ہے ۔ فضل الرحمن

چترال (نمائندہ آواز) چترال میں جنگلات کی بے دریغ اور تجارتی پیمانے پر کٹائی کے خلاف جنگلاتی گاؤں ایون کے باشندوں نے مرحلہ وار ہڑتال شروع کردی جو کہ دو دن بعد علامتی ہڑتال سے تادم مرگ بھوک ہڑتال میں بدل جائے گی۔ تحفظ جنگلات کے لئے کام کرنے والی عوامی فورم کے کنوینر فضل الرحمن نے منگل کے روز سیکرٹریٹ روڈ پر ٹاؤن ہال کے سامنے بھوک ہڑتالی کیمپ میں آنے والوں سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ان کے مطالبات میں چترال کے جنگلات کی کمرشل بنیادوں پر کٹائی پر مکمل پابندی کے علاوہ گزشتہ سالوں کٹائی شدہ لکڑیوں کو پرمٹ ریٹ پر چترال کے ضرورت مند عوام میں تقسیم ہے ۔ انہوں نے کہاکہ گزشتہ سالوں جنگلات کے تحفظ کے لئے آواز بلند کرنے والوں کے خلاف جھوٹی فوجداری مقدمات کا خاتمہ اور ان کے خلاف انسداد دہشت گردی کے دفعات کے تحت قائم مقدمات کی سماعت کے لئے چترال میں ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج کو خصوصی اختیارات تفویض کرنا بھی شامل ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ ایون کے عوام اب پہلے کی طرح میدان میں نکل گئے ہیں اور ان جائز مطالبات کے لئے کسی بھی قربانی سے دریغ نہیں کریں گے۔ 

سینئر صحافی حامد میر پر قاتلانہ حملے کے خلاف چترال میں سول سوسائٹی کے زیر اہتمام ایک احتجاجی جلوس نکالا

چترال (نمائندہ آواز) سینئر صحافی حامد میر پر قاتلانہ حملے کے خلاف چترال میں سول سوسائٹی کے زیر اہتمام ایک احتجاجی جلوس نکالاگیا جو کہ چترال پریس کلب کے سامنے جلسے پر احتتام پذیر ہوا۔ احتجاجی جلوس اور جلسے کا اہتمام کرنے والوں میں ڈسٹرکٹ بار ایسوسی ایشن، انسانی حقوق تنظیم ایل ۔اے۔پی۔ایچ ا ور دوسرے شامل تھے۔ جلسے سے خطاب کرتے ہوئے ڈسٹرکٹ بار ایسوسی ایشن کے صدر عالمزیب ایڈوکیٹ، نیاز اے نیازی ایڈوکیٹ اور دوسروں نے کہا کہ حامد میر پر حملہ دراصل آزادی صحافت پر حملہ ہے جس کی اجازت سول سوسائٹی کبھی نہیں دے گی۔ انہوں نے کہا کہ کراچی سے چترال تک سو ل سوسائٹی سراپا احتجاج ہیں ۔ انہوں نے اس واقعے کی مکمل طور غیر جانبدار تحقیقات کا مطالبہ کیا۔ 

Tuesday, April 22, 2014

کھیلوں کے وہ سامان ضلعی سپورٹس آفیسر کے دفتر سے غائب کئے گئے ۔ نذیر احمد

چترال(پ ر)انصاف سٹوڈنٹس فیڈریشن ضلع چترال کے صدر نذیر احمد نے اپنی ایک
اخباری بیان میں کہا ہے کہ موجودہ صوبائی حکومت نے ضلعی سطح پر کھیلوں کے
فروغ کے لئے اقدامات کی ہے۔ اس سلسلے میں ہر ضلع کو یو۔سی سطح تک کھیلوں
کے سامان دئیے گئے ہیں۔ اس ضمن میں ضلع چترال کے لئے مختص کردہ کھیلوں کے
سامان ضلعی سپورٹس آفیسر کو حوالہ کئے گئے تھے مگر کھیلوں کے وہ سامان
ضلعی سپورٹس آفیسر کے دفتر سے غائب کئے گئے ۔ اُنھوں نے کہا کہ ضلعی
سپورٹس آفیسر سے دریافت کرنے پر معلوم ہوا ہے کہ ایم۔پی۔ اے بی بی فوزیہ
نے ISF کے صدر کانام لیکر سامان غائب کروائی ہے۔ حالانکہ ISF کے صدر سے
یہ سارا معاملہ پوشیدہ رکھاگیا ہے ۔ اُنھوں نے کہا کہ ایم۔ پی۔ اے موصوف
نے خواتین کے لئے مختص اسپیشل فنڈ مبلغ ایک کروڑ روپے عبداللطیف صدر PTI
کے ایماء پر مختلف چینلز اور غیر ضروری جگہوں پر لگادیے ۔ اس سلسلے میں
ورکروں کو اندھیرے میں رکھا گیا۔ اُنھوں نے صوبائی حکومت سے اپیل کی ہے
اس معاملے میں تحقیقات کرواکر اس میں ملوث افراد کے خلاف کاروائی کی
جائے۔ بصورت دیگر ISF ضلع چترال اور ورکرز PTI چترال اس کے خلاف بھر
احتجاج کرنے پر مجبور ہونگے۔ جس کی تمام تر ذمہ داری ایم۔ پی۔ اے بی بی
فوزیہ پر عائد ہوگی۔